کوئی ملک اب کرپٹ حکمرانوں کی مدد کو نہیں آئے گا: چودھری پرویزالٰہی

عوام ان سے نجات کی دعائیں کر رہے ہیں، اپوزیشن جماعتیں ٹی او آر پر متفق تھیں، متحد نہ ہوئیں تو سب کا نقصان ہو گا

اگلا مہینہ اہم ہے، نوازشریف کے جانے پر تمام جماعتیں متفق ہیں، جہانگیر بدر منجھے سیاستدان تھے: اظہار تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو

لاہور(20نومبر2016) پاکستان مسلم لیگ کے سینئرمرکزی رہنما و سابق نائب وزیراعظم چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ اب کوئی ملک ان کرپٹ حکمرانوں کو بچانے کیلئے مدد کو نہیں آئے گا، پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما جہانگیر بدر مرحوم کی رہائش گاہ پر اظہار تعزیت اور فاتحہ خوانی کے بعد ان کے صاحبزادوں علی بدر، جہانزیب بدر کے ہمراہ میڈیا کے سوالوں کے جواب دے رہے تھے۔ میاں منیر، ڈاکٹر عظیم الدین لکھوی، شاداب جعفری ایڈووکیٹ اور دیگر رہنما بھی ان کے ہمراہ تھے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ مرحوم صاف گو، نرم دل، اچھے انسان اور منجھے ہوئے سیاستدان تھے۔ اپنی پارٹی کیلئے ان کی خدمات کو فراموش نہیں کیا جا سکتا، مشکل ترین دور میں بھی اور آخر دم تک پارٹی کے ساتھ مخلص رہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عوام جھولیاں پھیلا کر ان حکمرانوں سے نجات کی دعائیں کر رہے ہیں، پوری قوم کی نظریں اور امیدیں سپریم کورٹ پر ہیں، آنے والا مہینہ بہت اہم ہے جس میں بہت سے فیصلے ہوں گے اور یہ بھی اگلے ماہ ہی پتہ چلے گا کہ 2017ء الیکشن کا سال ہے یا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب کوئی ملک ان کو بچانے کیلئے تیار نہیں۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ حکمران کبھی ایک کبھی دوسرا خط لے آتے ہیں، یہ قطری شہزادے کا نہیں بلکہ سیف الرحمن شہزادے کا خط ہے، پنجاب میں 15سال سے یہ لوگ حکومت پر قابض ہیں لیکن انہوں نے عوامی فلاح کا کوئی کام نہیں کیا، پانامہ لیکس کا معاملہ سپریم کورٹ میں ہے اس لیے اس پر بات کرنا مناسب نہیں، اپوزیشن ایک پیج پر نہیں ہے، چودھری شجاعت حسین نے کہا تھا کہ جب تک اپوزیشن متحد نہیں ہو گی تب تک کچھ نہیں ہو گا، ہم ان کے اتحاد کیلئے کوشاں رہیں گے، تحریک انصاف نے وہی ٹی او آر سپریم کورٹ میں پیش کیے ہیں جو اپوزیشن نے متفقہ طور پر بنائے تھے اگر اپوزیشن جماعتیں متحد نہ ہوئیں تو سب کا نقصان ہو گا، نوازشریف کے خلاف گونوازگو کی ہر تحریک میں ہم نے اپوزیشن کا ساتھ دیا ہے، موجودہ صورتحال میں ایک بات پر سب جماعتیں متفق ہیں کہ نوازشریف کو جانا چاہئے، جب مقصد ایک ہے تو انہیں ایک پلیٹ فارم پر بھی ہونا چاہئے۔

photo-cpe-01-nov20-16

urdu-download

Share