سیاسی انتقام، سابق اپوزیشن لیڈر چودھری ظہیرالدین کے بھائی کی ٹرانسپورٹ کمپنی کا لائسنس منسوخ کر دیا گیا: کامل علی آغا

طلال چودھری ایم این اے اور منے خان فیصل آباد میں ٹرانسپورٹرز سے بھتہ وصول کرتے ہیں، تیمور ٹریولز کا اڈا سب سے پرانا تھا جسے بند کیا گیا، عدلیہ انصاف کرے

لاہور(15فروری2017) پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سینیٹر کامل علی آغا نے کہا ہے کہ پنجاب اسمبلی میں سابق اپوزیشن لیڈر اور پاکستان مسلم لیگ پنجاب کے جنرل سیکرٹری چودھری ظہیرالدین کے بھائی سابق ٹاؤن ناظم علی اختر خان کی ٹرانسپورٹ کمپنی تیمور ٹریولز کا لائسنس منسوخ کر دیا ہے اور اسے کام سے روکنے کیلئے پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ہے۔ انہوں نے ن لیگ کے ایم این اے طلال چودھری کے ایما پر اسے بدترین کارروائی قرار دیتے ہوئے عدلیہ سے انصاف کی اپیل کی ہے۔ کامل علی آغا نے کہا کہ طلال چودھری اور منے خان فیصل آباد کے ٹرانسپوٹرز سے بھتہ وصول کرتے ہیں اور انہوں نے سرکاری اڈے پر بھی قبضہ کر رکھا ہے لیکن علی اختر کی کمپنی ان کو بھتہ نہیں دے رہی تھی جس کی بنا پر تیمور ٹریولز کے خلاف انتقامی کارروائی کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ایک ہی سڑک پر چار اڈے چل رہے ہیں جن میں سے تیمور ٹریولز سب سے پرانی کمپنی ہے جو عوام کو سفری سہولتیں فراہم کر رہی تھی۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح ایک تیر سے دو شکار کیے گئے ہیں اور تیمور ٹریولز کو بند کر کے اس کا سارا بزنس طلال چودھری کے کار خاص منے خان کے اڈے پر چلا جائے گا جس سے طلال چودھری اور فیصل آباد کی انتظامیہ بھی مستفیض ہوتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ مقامی انتظامیہ طلال چودھری کے ہاتھوں میں کھیل رہی ہے اور تمام قواعد و ضوابط کو روندتے ہوئے تیمور ٹریولز کو انتقامی کارروائی کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

urdu-download

Share