نوازدور میں چیف جسٹس سجاد علی شاہ کے بیڈروم فونز بھی ٹیپ کیے جاتے تھے: چودھری شجاعت حسین

فون ریکارڈنگ کے ثبوت پیر کو پریس کانفرنس میں پیش کروں گا، نہال ہاشمی نوازشریف کی زبان بول رہے ہیں، انہیں قربانی کا بکرا بنایا گیا

لاہور(03جون2017) پاکستان مسلم لیگ کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین نے عدلیہ اور فاضل ججوں پر تنقید پر نہایت افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ججوں کے خلاف بیان دینا اور ٹیلیفون ٹیپ کروانا نوازشریف کی پرانی عادت ہے یہاں تک کہ سابق چیف جسٹس آف پاکستان سید سجاد علی شاہ کے بیڈ روم تک کے فون نوازشریف کے دور میں ٹیپ کیے جاتے تھے اور وہ پیر کو پریس کانفرنس میں ٹیلیفون ریکارڈ ہونے کے ثبوت پیش کریں گے۔ چودھری شجاعت حسین نے اس عمل کو غیراخلاقی اور گری ہوئی سوچ کا عکاس قرار دیتے ہوئے مزید کہا کہ نہال ہاشمی کا بیان ذاتی نہیں وہ نوازشریف کی زبان بول رہے ہیں انہیں قربانی کا بکرا بنایا گیا ہے۔

Share