فیصل آباد میں میڈیا پر حملہ کی مذمت کرتے ہیں، پولیس کیوں سوتی رہی: چودھری پرویزالٰہی

زرعی یونیورسٹی کے گارڈز نے صحافیوں اور کیمرہ مینوں پر باہر سڑک پر بدترین تشدد کیا، آزاد صحافت کیلئے میڈیا کا ساتھ دیتے رہیں گے

لاہور(20جون2017) پاکستان مسلم لیگ کے سینئرمرکزی رہنما و سابق نائب وزیراعظم چودھری پرویزالٰہی نے فیصل آباد میں زرعی یونیورسٹی کے سکیورٹی گارڈز کے میڈیا پر حملہ کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ گارڈز کی کھلم کھلا غنڈہ گردی پر پولیس سوتی رہی۔ انہوں نے ایک بیان میں زخمی ہونے والے صحافیوں، کیمرہ مینوں اور اہلکاروں سے مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے میڈیا کی آواز روکنے کی ہمیشہ مخالفت اور مذمت کی ہے، میڈیا رپورٹس کے مطابق زرعی یونیورسٹی کے سکیورٹی گارڈز نے میڈیا کو طلبہ کی آواز عوام تک پہنچانے سے روکنے کیلئے یونیورسٹی حدود سے باہر سڑک پر نہ صرف صحافیوں اور کیمرہ مینوں پر بدترین تشدد کیا بلکہ ان کی گاڑیوں اور قیمتی آلات کو بھی توڑ پھوڑ دیا لیکن پولیس خاموش تماشائی بنی رہی اور اس نے میڈیا اور طلبہ کو بچانے کیلئے کچھ نہیں کیا۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ صحافیوں پر پتھراؤ، تشدد، لاٹھیوں اور ڈنڈوں سے لہولہان کرنے اور میڈیا کی گاڑیوں کو توڑنے کے مناظر اس بات کا بین ثبوت ہیں کہ موجودہ حکمران میڈیا کی آواز دبانے اور صحافیوں پر ظلم و تشدد کی اپنی دیرینہ روایت کو قائم رکھے ہوئے ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے لیکن ہماری جماعت آزادی صحافت کی علمبردار ہونے کی حیثیت سے صحافیوں، کیمرہ مینوں اور میڈیا کارکنوں کا کھل کر ساتھ دیتی اور ان کے حقوق کے تحفظ کیلئے اپنا کردار ادا کرتی رہے گی۔

Share