ختم نبوت ایمان کا معاملہ ہے کوئی مسلمان خاموش نہیں رہ سکتا: چودھری شجاعت حسین، پرویزالٰہی

کاغذات نامزدگی میں عقیدہ ختم نبوت پر ایمان کی شق میں تبدیلی کا مقصد مخصوص ایجنڈے کی تکمیل ہے

لاہور/اسلام آباد(02اکتوبر2017ء) پاکستان مسلم لیگ کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین اور سینئرمرکزی رہنما و سابق نائب وزیراعظم چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ ختم نبوت ایمان کا مسئلہ ہے جس پر کوئی مسلمان خاموش نہیں رہ سکتا۔ انہوں نے پارلیمنٹ کا الیکشن لڑنے کیلئے کاغذات نامزدگی میں عقیدہ ختم نبوت پر قسم کے الفاظ کی شق ختم کر کے اقرار نامے میں بدلنے کی شدید مذمت کی ہے اور کہا کہ قسم اور اقرار نامے میں وا ضح فرق ہے۔ ’’میں صدق دل سے قسم اٹھاتاہوں‘‘ کے الفاظ بدل کر شامل کیا گیا کہ ’’میں اقرار کرتا ہوں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ اس موقع پر حلف نامے کے الفاظ کی تبدیلی سے وا ضح ہوتا ہے کہ حکمران ایک مخصوص ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ختم نبوت کے معاملہ پر پاکستان کے مسلمان ماضی میں گراں قدر قربانیاں پیش کر چکے ہیں جو ہماری تاریخ کا روشن باب ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں تمام کلمہ گو ایک پیج پر ہوں گے اور پاکستان مسلم لیگ معاملہ کا مکمل جائزہ لینے کے بعد تفصیلی اور بھرپور ردعمل دے گی۔

Share