روزگار کیلئے جانے والے نوجوانوں کا خون حکمرانوں کے سر ہے: چودھری پرویزالٰہی

ملک میں روزگار ہوتا تو آج ان کے گھروں میں صف ماتم نہ بچھی ہوتی، آپ کا دکھ ہمارا دکھ ہے: گجرات کے متاثرہ خاندانوں کو ٹیلیفون

لاہور(19نومبر2017ء) پاکستان مسلم لیگ کے سینئرمرکزی رہنما و سابق نائب وزیراعظم چودھری پرویزالٰہی نے روزگار کی تلاش میں جانے والے گجرات اور دیگر اضلاع کے بے گناہ نوجوانوں کے بلوچستان میں قتل عام پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ان کے لواحقین اور میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ وہ متاثرہ خاندانوں کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ واقعات سفاکی کی بدترین مثال اور ہماری روایات کے منافی ہیں اور ان کا خونِ ناحق حکمرانوں کے سر ہے جنہوں نے اگر ملک میں روزگار کے مواقع فراہم کیے ہوتے تو آج اپنے گھروں کے چراغ جلانے کیلئے گھر چھوڑ کر جانے والوں کے گھروں میں آج صف ماتم نہ بچھی ہوتی۔ انہوں نے گجرات کے مختلف نوجوانوں کے والدین سے ٹیلیفون پر تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ کا دکھ ہمارا دکھ ہے، اتنے بڑے نقصان کی تلافی ناممکن ہے، دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ آپ کو صبر جمیل عطا فرمائے۔ چودھری پرویزالٰہی نے میڈیا کے سوالات کے جواب میں کہا کہ جب تک ہمارے حکمران ملک میں روزگار کے زیادہ سے زیادہ مواقع پیدا نہیں کریں گے، حصول روزگار کیلئے لوگ غیرقانونی طریقے سے باہر جانے پر مجبور ہوں گے اور بہتر مستقبل کے لالچ میں ایجنٹوں کے ہتھے چڑھ کر مختلف سانحات کا شکار ہوتے رہیں گے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ کمیشن کے لالچ میں نوجوانوں کو جھانسے دے کر ان کی زندگی سے کھیلنے والے ایجنٹوں اور ان انسانی سمگلروں کے نیٹ ورکس کے خلاف موثر اور دیرپا نتائج کی حامل کارروائی کی اشد ضرورت ہے تاکہ ایسے دردناک واقعات نہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ زبانی جمع خرچ کی بجائے ملک میں روزگار کے زیادہ سے زیادہ مواقع کی فراہمی اور پڑھے لکھے نوجوانوں کیلئے ملازمتوں کا بندوبست کرنا بہت ضروری ہے۔

Share