انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں 70 سال پہلے سے بھی بڑھ گئیں: مونس الٰہی

کشمیر، فلسطین اور برما میں اقوام متحدہ اور عالمی فورم ناکام، ماڈل ٹاؤن کے قتل عام میں بھی حکومت خود ملوث تھی

لاہور(09دسمبر2017ء) پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی رہنما مونس الٰہی نے عالمی سطح پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ عالمی ادارے انہیں روکنے میں بے بس دکھائی دیتے ہیں۔ انہوں نے ایک بیان میں کہا کہ آج 10 دسمبر کے روز جب دنیا 70 سال پہلے عالمی انسانی حقوق ڈیکلیریشن کی اقوام متحدہ سے منظوری کا دن منا رہی ہے تو انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں جنگ عظیم دوم اور نازی قتل عام سے بھی زیادہ خوفناک ہو چکی ہیں۔ مونس الٰہی نے عالمی یوم انسانی حقوق کی مناسبت سے اپنے پیغام میں کشمیر، فلسطین اور برما میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ اور دیگر عالمی فورم کشمیریوں، فلسطینیوں اور روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کو ختم کرانے میں ناکام نظر آرہے ہیں۔ انہوں نے پاکستان میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر بھی شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ 2014ء میں ماڈل ٹاؤن لاہور کے قتل عام سے یہ عیاں ہے کہ حکومت بجائے ظلم ختم کرنے کے نہتے عوام کی خونریزی میں خود ملوث تھی۔

Share