وزیراعظم صوابدیدی اختیارات استعمال کرتے ہوئے نوازشریف کو بیرون ملک جانے دیں، حکومت انہیں مکمل طبی سہولیات فراہم کرے: چودھری شجاعت حسین

سیاسی معاملات میں عدلیہ کو نہ الجھایا جائے، عدالتی فیصلوں اور حکومت کے ایگزیکٹو فیصلوں میں فرق ہوتا ہے عدالتی فیصلے بطور نظیر استعمال ہوتے ہیں

لاہور(26اکتوبر2019) پاکستان مسلم لیگ کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین نے تجویز دی ہے کہ سیاسی معاملات میں عدلیہ کو نہ الجھایا جائے، وزیراعظم عمران خان اپنے صوابدیدی اختیارات استعمال کرتے ہوئے نواز شریف کو بیرون ملک علاج کیلئے جانے دیں اور حکومت انہیں مکمل طبی سہولیات بھی فراہم کرے۔ چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ سیاسی نوعیت کے مقدمات میں فیصلوں کو عدالتی نظیر کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے جس سے مسائل پیدا ہوتے ہیں، ایسے مقدمات کو بنیاد بنا کر دیگر لوگ بھی عدالتوں پر بوجھ ڈالتے ہیں، عدالتی فیصلوں اور حکومت کے ایگزیکٹو فیصلوں میں فرق ہوتا ہے کیونکہ ایگزیکٹو کے اقدامات صوابدیدی اختیارات کے تحت غیر معمولی حالات میں کئے جاتے ہیں اور یہ عدالتی نظیر نہیں بنتے۔ چودھری شجاعت حسین نے مزید کہا کہ نواز شریف پر ملک دشمنی کا الزام نہیں ہے ان پر صرف مالی بدعنوانی کے الزامات ہیں، ایسے مقدمات میں عدلیہ کو امتحان میں نہیں ڈالنا چاہئے اس کے دور رس خطرناک نتائج نکل سکتے ہیں۔

Share