فضلہ جلانے کی بجائے انرجی پیدا کرنے کی ٹیکنالوجی سے استفادہ کرنا چاہئے، کسانوں کو گھریلو صارفین کو وافر گیس مل سکتی ہے: چودھری پرویزالٰہی

شہبازشریف کی نااہلی کی وجہ سے میرے دور کا سرپلس صوبہ 2ہزار ارب کا مقروض ہوا، موسمی ماحول ٹھیک کرنے کے ساتھ ساتھ سیاسی ماحول بھی ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے

بطور وزیراعلیٰ اپنے ویژن 2020 کے تحت پنجاب کی تاریخ میں پہلی مرتبہ مضر ماحولیاتی اثرات کے تدارک کیلئے باتیں نہیں کام کیا: ماحولیاتی کانفرنس سے خطاب

      لاہور(27دسمبر2019) سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ سموگ کے خاتمے کیلئے اقدامات کیے جا رہے ہیں، بطور وزیراعلیٰ پنجاب ویژن 2020 کے تحت پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار ماحول کی بہتری کیلئے 200 ملین کا اضافہ کیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان مسلم لیگ کے تحت ہونے والی پہلی ماحولیاتی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر صدر پلڈاٹ احمد بلال محبوب اور رضوان ممتاز علی سربراہ مسلم لیگ ریپیڈ ونگ نے بھی خطاب کیا جبکہ اس موقع پر کامل علی آغا، خدیجہ فاروقی، ڈاکٹر زین بھٹی، احمد فاران خان، مظہر علی لغاری، آمنہ الفت سمیت دیگر شخصیات موجود تھیں۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ پنجاب کی ترقی کیلئے دن رات کام کر کے صوبے کو سرپلس بنایا تھا مگر شہبازشریف کی نااہلی کی وجہ سے میرے دور کا سرپلس صوبہ 2 ہزار ارب کا مقروض ہو گیا، اب صوبے کو ٹھیک کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے اس میں وقت لگے گا، موسمی ماحول ٹھیک کرنے کے ساتھ ساتھ سیاسی ماحول بھی ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ میں نے اپنے دورِ وزارتِ اعلیٰ میں اپنے ویژن 2020 پروگرام کے تحت پنجاب کی تاریخ میں پہلی دفعہ مضر ماحولیاتی اثرات کے تدارک کیلئے باتیں نہیں کام کر کے دکھایا، میں نے میونسپل ویسٹ، سولیڈ ویسٹ، صنعتی فضلہ اور ٹرانسپورٹ کی وجہ سے ماحول میں پیدا ہونے والی زہریلے اثرات کے خاتمہ کیلئے عملی اور دوررس اقدامات کیے۔ جن کا مقصد پنجاب کے ماحولیات کی حفاظت بحالی اور بہتری تھا۔ انہوں نے کہا کہ حال ہی میں میرے پاس پاکستان میں موجود ایک کورین کمپنی کے سربراہ پنجاب میں سموگ کے خاتمہ کا ایک منصوبہ لے کر آئے ہیں۔ اس منصوبے کے مطابق کسانوں کوفصل کاٹنے کے بعد جو مڈھ رہ جاتے ہیں انہیں جلانے کی ضرورت نہیں ہوگی اور یہ کمپنی کسانوں کو مڈھ نہ جلانے پر الٹا معاوضہ دے گی۔ اس مجوزہ منصوبے کے مطابق وہ کمپنی کھیتوں سے خود کاٹ کر ان سے گیس پیدا کرے گی جو گھریلو اور صنعتی استعمال کیلئے انتہائی سستی اور سو فیصد ماحول دوست ہوگی۔ میں سمجھتا ہوں کہ حکومت پنجاب کو اس پیشکش کو فوری طور پر منظور کرنا چاہیے اور اس پر کام شروع کرنا چاہیے۔ میں نے 200 ملین روپے کی لاگت سے انوائرنمنٹل پروٹیکشن ڈیپارٹمنٹ کی استطاعت بڑھانے کیلئے گوجرانوالہ، سیالکوٹ، راولپنڈی، فیصل آباد، ملتان، مری، او ررحیم یار خان میں جدید انوائرنمنٹل لیبز قائم کیں۔ ہسپتالوں کامضر صحت فضلہ ماحولیاتی آلودگی کی ایک بڑی وجہ ہے۔ لہٰذا ایک مرحلہ وار پروگرام کے تحت میری حکومت نے لاہور سمیت صوبہ کے دیگر سرکاری ہسپتالوں میں آگ سے تلف کرنے والے پلانٹس لگانے شروع کیے۔ آج تیزی سے بڑھتی ہوئی آبادی اور شہروں کے وسائل پر حد سے زیادہ بوجھ ہمارے ماحولیاتی مسائل کی بڑی وجوہات ہیں۔ درختوں کے کٹاؤ، صنعتوں کے پھیلاؤ اور پٹرول و ڈیزل سے چلنے والی ٹرانسپورٹ نے پنجاب میں فضائی آلودگی میں بے پنا ہ اضافہ کر دیا ہے۔ اس ماہ کی ائیر کوالٹی انڈکس کے مطابق بد قسمتی سے لاہور دنیا کا آلودہ ترین شہر قرار دیا گیا ہے۔ یہ انتہائی تشویشناک امر ہے کہ ہماری فضا میں موجو د زہریلا دھواں سموگ کی شکل میں خطرناک سطح سے کہیں زیادہ تجاوز کر چکا ہے۔ کارکن ایکو فرینڈز کے تحت بلا تفریق اپنے علاقہ کے عوام کی خدمت کر یں گے۔ مجھے امید ہے کہ آنے والے دور میں پاکستان مسلم لیگ ایکو فرینڈز کے ذریعے عوامی خدمت اور بہتر ماحولیات کیلئے بہترین نتائج دے گی۔ بعد ازاں چودھری پرویزالٰہی نے ایکو فرینڈز کے زیراہتمام مختلف اضلاع میں بہترین کارکردگی پر ٹیم لیڈر رضوان ممتاز علی، خدیجہ فاروقی، شاکر حسین شاہ اور دیگر رہنماؤں کو اعزازی شیلڈیں بھی دیں۔

Share