عدالت میں کیس پر تبصرہ نہیں کرنا چاہتا صرف پانچ ارب کے صفر بتا دیں: چودھری شجاعت حسین

بغیر ثبوت الزام شائع کرانے والے ثابت کرنا چاہتے ہیں کہ ہم سب جماعتوں سے یکساں سلوک کرتے ہیں خواہ کسی کا قصور ہو یا نہیں

ہم پر الزام 20 سال پہلے گھڑے گئے اب پھر ہڈیاں جوڑ کر بت بنانا چاہتے ہیں: سینئر صحافیوں کے اصرار پر گفتگو

لاہور(26جولائی2020) پاکستان مسلم لیگ کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین نے کہا ہے کہ جو کیس عدالت میں ہو اس پر میں تبصرہ نہیں کرتا، سینئر صحافیوں کے اصرار پر میں یہ کہوں گا کہ چودھری پرویزالٰہی کے صاحبزادے اور میرے فیملی ممبر چودھری مونس الٰہی ایم این اے نے نیب کی جانب سے لگائے گئے الزامات کی وضاحت کر دی ہے، میں سینئر صحافیوں سے کہوں گا کہ آپ اربوں کے صفر مجھے بتا دیں تاکہ میں اس پر وضاحت کر سکوں۔ چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ میں کئی مرتبہ کہہ چکا ہوں کہ ہم نے کسی ادارے سے کبھی کوئی قرضہ معاف نہیں کروایا، بغیر ثبوت اس طرح کے الزامات چھپوائے جاتے ہیں جس کا مقصد سیاستدانوں پر بہتان تراشی کر کے ان کوبدنام کرنا ہے، الزام لگانے والے اس بات کو ثابت کرنا چاہتے ہیں کہ ہم سب پارٹیوں کے ساتھ یکساں سلوک کرتے ہیں خواہ کسی کا قصور ہو یا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ میری خواہش ہے کہ وہ اربوں روپے کا الزام لگاتے وقت صفروں کا خیال ضرور رکھیں، انہیں اس بات کی سمجھ ہی نہیں کہ 5 ارب میں کتنے صفر آتے ہیں، وہ کم از کم اپنے سکول کے بچوں سے ہی پوچھ لیں کہ 5 ارب میں کتنے صفر آتے ہیں۔ چودھری شجاعت حسین نے مزید کہا کہ ہم پر لگائے گئے الزامات آج سے 20 سال پہلے معرض وجود میں آئے تھے اور وہ کئی مرتبہ ختم بھی ہو چکے ہیں لیکن یہ دوبارہ ہڈیاں جوڑ کر پرانے بت کی بجائے نیا مجسمہ بنانا چاہتے ہیں۔

Share