برطانوی پارلیمنٹ میں پرو قادیانی رپورٹ امت مسلمہ کیخلاف سازش ہے: پنجاب اسمبلی

رپورٹ میں پاکستانی قوانین کو قادیانیوں کے حق میں بدلنے اور انہیں تعلیمی اداروں میں تبلیغ کی اجازت دینے کے یکطرفہ مطالبات شامل ہیں

سپیکر چودھری پرویزالٰہی کی زیرصدارت اجلاس میں قراراد مسلم لیگ کے رکن عبداللہ وڑائچ نے پیش کی، حکومت پاکستان سے رپورٹ واپس کرانے کا مطالبہ، فرانس اور سویڈن میں توہین رسالت اور قرآن پاک کی بے حرمتی کی بھی شدید مذمت

لاہور(08ستمبر2020) سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی کی زیر صدارت اجلاس میں برطانوی پارلیمنٹ میں قادینوں کے حق پیش کردہ رپورٹ

Suffocation of the Faithful

کے خلاف پنجاب اسمبلی میں قرارداد پیش کی گئی جسے متفقہ طور پر منظور کر لیا گیا۔ یہ قرارداد پاکستان مسلم لیگ کے رکن عبداللہ وڑائچ نے پیش کی جبکہ ساجد احمد خان بھٹی، ن لیگ کے ارکان رانا محمد اقبال خان، سمیع اللہ خان، ملک احمد خان اور پیپلزپارٹی کے رکن سید حسن مرتضیٰ نے اس قرارداد کی حمایت کی۔ قرارداد کے متن میں کہا گیا ہے کہ قادیانیوں کے حق میں برطانوی پارلیمنٹ کے چند ارکان کی بنائی گئی رپورٹ کی پرزور الفاظ میں مذمت کرتے ہیں، یہ رپورٹ ”آل پارٹی پارلیمانی گروپ برائے احمدیہ“ کی طرف سے جاری کی گئی ہے، رپورٹ کے مطابق پاکستان میں قادیانیوں کے خلاف ظلم و جبر اور استحصال ریاست پاکستان کی سرپرستی میں ہو رہا ہے، رپورٹ میں برطانوی حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ پاکستان کو دی جانے والی امداد کو اس رپورٹ میں دی گئی سفارشات کی منظوری سے مشروط کیا جائے، رپورٹ میں پاکستان سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ پاکستان کے قوانین میں قادیانیوں کے حق میں تبدیلی کی جائے اور قادیانیوں کو تعلیمی اداروں میں تبلیغ کی مکمل اجازت دی جائے جبکہ اس رپورٹ کے ذریعے پاکستان پر سنگین الزامات تو لگائے گئے ہیں لیکن پاکستان کا مؤقف ہی شامل نہیں۔ قرارداد کے متن کے مطابق یہ رپورٹ دراصل پاکستانی مسلمانوں کے ساتھ ساتھ پوری دنیا کے مسلمانوں کے خلاف گھناؤنی سازش ہے اسی لیے یہ ایوان مطالبہ کرتا ہے کہ حکومت پاکستان اور دفتر خارجہ اس رپورٹ کو برطانوی پارلیمنٹ سے فوری طور پر واپس کروائے تاکہ امت مسلمہ کے خلاف اس سازش کو مکمل طور پر ناکام کروایا جائے، یہ پاکستان کی خودمختاری کے خلاف سازش ہے۔ قراراد کے متن کے مطابق پنجاب اسمبلی کا یہ ایوان فرانس اور سویڈن میں توہین رسالت اور قرآن پاک کی بے حرمتی کے نہایت ہی مذموم واقعہ پر بھی سخت ترین الفاظ میں مذمت کا اظہار کرتا ہے، ان واقعات سے پوری امت مسلمہ کے جذبات مجروح ہوئے، مغربی دنیا کو یہ احساس ہی نہیں کہ توہین رسالت یا توہین قرآن سے مسلمانوں پہ کیا گزرتی ہے۔ قرارداد میں مطالبہ کیا گیا کہ اس فتنے کے سد باب کیلئے وزارت خارجہ اور حکومت پاکستان فوری طور پر آواز بلند کرے، برطانوی پارلیمنٹ سے یہ رپورٹ واپس کروائی جائے، جبکہ قرآن پاک کی بے حرمتی اور توہین رسالت کے معاملے پر فرانس اور سویڈن کی حکومت سے بھی احتجاج کرے، حکومت مستقبل میں ایسے واقعات کو رکوانے کیلئے اقدامات کرے۔

 

 

Share