چودھری پرویزالٰہی اور مونس الٰہی سے برطانوی ہائی کمشنر ڈاکٹر کرسچن ٹرنر کی ملاقات

پنجاب اسمبلی کی سٹینڈنگ کمیٹیوں کو پہلی بار بااختیار بنانے کا جمہوری عمل قابل تحسین ہے: برطانوی ہائی کمشنر

برٹش ایئرویز کا لاہور اور اسلام آباد سے روٹ بحال کرنے اور تفریحی مقامات پر جا کر پاکستان کی سیاحت کو فروغ دینے پر آپ کے مشکور ہیں: چودھری پرویزالٰہی

برطانوی ہائی کمشنر نے چودھری شجاعت حسین کی خیریت دریافت کی، موجودہ سیاسی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر بھی تبادلہ خیال

لاہور(17نومبر2020) سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی اور ایم این اے مونس الٰہی سے برطانوی ہائی کمشنر ڈاکٹر کرسچن ٹرنر نے یہاں ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ اس موقع پر برطانوی ہائی کمشنر کے پولیٹیکل سیکرٹری ہیری تھامسن  اور کامن ویلتھ ڈویلپمنٹ آفیسرجنال شا بھی موجود تھے۔ ملاقات میں برطانوی ہائی کمشنر نے چودھری شجاعت حسین کی خیریت دریافت کی جبکہ موجودہ سیاسی صورتحال اور باہمی دلچسپی کے امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ چودھری پرویزالٰہی نے برطانوی ہائی کمشنر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ برٹش ایئرویز کا لاہور اور اسلام آباد سے روٹ بحال کرنے کا اقدام خوش آئند ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپ شمالی علاقہ جات میں تفریحی مقامات اور سیاحت کو فروغ دینے کے حوالے سے جو ذاتی دلچسپی لے رہے ہیں اس پر ہم آپ کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ برطانوی ہائی کمشنر نے پنجاب اسمبلی کی سٹینڈنگ کمیٹیوں کو پہلی بار بااختیار بنانے کے جمہوری عمل کو قابل تحسین اقدام قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ ہیلتھ اور تعلیم کے سیکٹر میں پاکستان کی مدد کر رہا ہے اور فنڈز بھی مختص کر دئیے گئے ہیں جس سے ان محکموں میں ٹریننگ سے لے کر انفراسٹرکچر کے شعبوں میں بڑی مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ اب تک اس شعبہ میں جو ریسرچ ہو چکی ہے اس کی بدولت پاکستان کو بھی اس کے ثمرات ملیں گے۔ برطانوی ہائی کمشنر نے کہا کہ وفاقی حکومت جیسے ہی اسے منظور کرتی ہے صوبے جلد قانون سازی کے عمل کو مکمل کر لیں۔ برطانوی ہائی کمشنر نے چودھری شجاعت حسین، چودھری پرویزالٰہی اور مونس الٰہی کو برطانوی ہائی کمیشن کے دورے کی دعوت بھی دی۔

Share