اپوزیشن کو مشورہ ہے کہ سسٹم میں رہ کر الیکشن بھی لڑے اور سیاست بھی کرے اسی میں جمہوریت کی بہتری ہے: چودھری پرویزالٰہی

انشاء اللہ جلد ہی پنجاب اسمبلی کی نئی بلڈنگ بھی مکمل ہوجائے گی جس کا افتتاح وزیراعظم عمران خان سے کروائیں گے

پارلیمنٹ کو مضبوط کرناچاہئے سارے راستے وہیں سے نکلیں گے، حکومتیں آتی جاتی رہتی ہیں اگر عوام کیلئے کچھ کیاجائے تو اسے ہمیشہ یاد رکھا جاتاہے: پنجاب اسمبلی پریس گیلری کی تقریب حلف برداری سے خطاب

لاہور(10فروری2021) قائم مقام گورنر پنجاب چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ اپوزیشن کو مشورہ ہے کہ سسٹم میں رہ کر الیکشن بھی لڑے اور سیاست بھی کرے اسی میں جمہوریت کی بہتری ہے، سینیٹ انتخابات میں اپوزیشن کا حصہ لینا اچھا فیصلہ ہے، اپوزیشن سینیٹ کے بعد بلدیاتی انتخابات کی بھی تیاری کرے۔ وہ یہاں گورنر ہاؤس میں پنجاب اسمبلی پریس گیلری کے عہدیداروں کی تقریب حلف برداری سے خطاب کر رہے تھے۔ تقریب میں سیکرٹری پنجاب اسمبلی محمد خان بھٹی، ڈی جی پارلیمانی امور عنایت اللہ لک، صدر لاہور پریس کلب ارشد انصاری اور سینئر صحافیوں نے شرکت کی۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ پارلیمنٹ کو مضبوط کرنا چاہئے سارے راستے وہیں سے نکلیں گے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ حکومتیں آتی جاتی رہتی ہیں عوامی مسائل کو حل کرنے پر فوکس کرنا چاہئے، اگر عوام کیلئے کچھ کیا جائے تو اسے ہمیشہ یاد رکھا جاتا ہے۔ چودھری پرویزالٰہی نے بتایا کہ انشاء اللہ جلد ہی پنجاب اسمبلی کی نئی بلڈنگ بھی مکمل ہوجائے گی، وزیراعظم عمران خان سے نئی اسمبلی کا افتتاح کروائیں گے، نئی بلڈنگ میں اپوزیشن اور حکومتی ارکان سب کو سہولتیں ملے گی، اگر ہم اپنی انا کے دائرے سے باہر نہیں نکلتے تو نقصان ہوتا ہے، سیاست میں جتنا جھک کر چلیں گے تو کامیابی حاصل کریں گے، اپوزیشن کا کوئی نقصان نہیں ہوتا وہ تو حاصل ہی کرتے ہیں۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ نیک نیتی سے ہی عوامی اور سیاسی مسائل حل ہوتے ہیں، اپوزیشن اور حکومت کے ساتھ چلنے سے چیزیں بہتر ہو جاتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کاش شہباز شریف صحافیوں کیلئے کوئی کام کر جاتے تو میں بھی تعریف کرتا۔ انہوں نے کہاکہ بائیکاٹ کسی چیز کا حل نہیں ہوتا، 1985ء میں، میں نے الیکشن لڑا تھا پیپلز پارٹی نے بائیکاٹ کیا تھا جس کا پیپلز پارٹی کو بڑا نقصان ہوا تھا اور اس فیصلے کے نتائج ان کے حق میں کافی دیر تک خراب رہے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ وہ وزیراعلیٰ سے صحافیوں کے مسائل کے حوالے سے بات کریں گے، کورونا کی وجہ سے جہاں دوسرے امور مشکلات کا شکار ہوئے وہیں حلف برداری بھی تاخیر کا شکار ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمانی رپورٹنگ منتخب نمائندوں کے حلقوں اور عوام کے مسائل کے حل میں اہم کردار ادا کرتی ہے، پنجاب اسمبلی کے پلیٹ فارم سے ہونے والی قانون سازی اور بحث کو پارلیمانی رپورٹرز اجاگر کرتے ہیں، پارلیمانی رپورٹنگ سے اسمبلی کی کارروائی عوام تک پہنچتی ہے عوام کو پتہ چلتا ہے کہ ان کے نمائندے کیا کررہے ہیں، پارلیمانی رپورٹرز اور اسمبلی کے ارکان کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔

Share