پنجاب حکومت کالجز کی بندش کے حوالے سے اپنی پالیسی تبدیل کرے، یونیورسٹیوں سے کالجز واپس لیکر خودمختار کریں تاکہ غریب طلبا کی تعلیم کا حرج نہ ہو: چودھری پرویزالٰہی

پنجاب پروفیسر لیکچرار ایسوسی ایشن کے وفد کی مس ناہیدہ اور صدر گجرات بار چودھری آصف محمود دھول ایڈووکیٹ کی سربراہی میں سپیکر پنجاب اسمبلی سے ملاقات، مسائل سے آگاہ کیا

پنجاب میں ایف اے تک کالجز بند نہیں ہونے دیں گے، کالجز کی بندش سے ہزاروں غریب طلبا کا مستقبل تباہ ہو جائے گا، والدین پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی بھاری فیسیں برداشت نہیں کر سکتے: وفد سے گفتگو

ملاقات میں مصباح شاہین، مسز قندیل آصف، بشریٰ نوید، مسز نویدہ لیاقت، مسز نبیلہ ہارون اور مرزا عابد ایڈووکیٹ بھی موجود تھے

لاہور(08جون2021) سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی سے پنجاب پروفیسر لیکچرار ایسوسی ایشن کے وفد نے سیکرٹری جنرل مسز ناہیدہ اور صدر گجرات بار چودھری آصف محمود دھول ایڈووکیٹ کی سربراہی میں ملاقات کی۔ وفد میں اسسٹنٹ پروفیسر مصباح شاہین، مسز قندیل آصف، بشریٰ نوید، مسز نویدہ لیاقت، مسز نبیلہ ہارون اسسٹنٹ پروفیسر شامل تھیں جبکہ اس موقع پر مرزا عابد ایڈووکیٹ بھی موجود تھے۔ پروفیسر لیکچرار ایسوسی ایشن کے وفد نے سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی کو مسائل سے آگاہ کیا۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ پنجاب حکومت کالجز کی بندش کے حوالے سے اپنی پالیسی تبدیل کرے، یونیورسٹیوں سے کالجز واپس لے کر خودمختار کریں تاکہ غریب طلبا کی تعلیم کا حرج نہ ہو، پنجاب میں ایف اے تک کالجز بند نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا نہیں ہو سکتا کہ جب یونیورسٹیز کو ضرورت ہو تو وہ کالجز کی بلڈنگ اور سٹاف کو اپنے دائرہ اختیار میں لے لیں، شروع شروع میں یونیورسٹیوں کو کامیاب بنانے کیلئے کالجز کو بطور فیڈر استعمال کر کے دھکا دینا کہاں کا انصاف ہے، جن کالجز میں بچوں نے ایف اے تک تعلیم حاصل کرنی ہے وہاں پر کالجز کا سابق اسٹیٹس بحال ہونا چاہئے، غریب بچوں کو تعلیم کا سلسلہ رکنا نہیں چاہئے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ کالجز کی بندش سے ہزاروں طلبا کا مستقبل تباہ ہو جائے گا، سرکاری کالجز کے بند ہونے سے غریب والدین اپنے بچوں کو پرائیویٹ کالجز کی مہنگی تعلیم نہیں دلا سکتے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت کا فرض ہے کہ وہ طلبا کو اچھی اور معیاری تعلیم فراہم کرے، کالجز کو اپ گریڈ کرنا پنجاب حکومت کی ذمہ داری ہے۔

Share