Wednesday , October 5 2022
Home / Featured / اسمبلی میں کرائسس کے ذمہ دار حمزہ شہباز، شہباز شریف، ڈپٹی سپیکر اور آئی جی پنجاب ہیں: چودھری پرویزالٰہی

اسمبلی میں کرائسس کے ذمہ دار حمزہ شہباز، شہباز شریف، ڈپٹی سپیکر اور آئی جی پنجاب ہیں: چودھری پرویزالٰہی

شہباز شریف کے کہنے پر ارکان اسمبلی پر حملہ کیا گیا، وزیراعلیٰ کا الیکشن غیر آئینی اور غیر قانونی ہے، پولیس کی مداخلت سے پوری اسمبلی کا استحقاق مجروح ہوا ہے

صوبہ میں کوئی آئینی بحران نہیں سردار عثمان بزدار آج بھی وزیراعلیٰ پنجاب ہیں: ارکان اسمبلی کے ہمراہ اسمبلی میں پریس کانفرنس

لاہور(28اپریل2022) سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ اسمبلی میں کرائسس کے ذمہ دار حمزہ شہباز، شہباز شریف، ڈپٹی سپیکر اور آئی جی پنجاب ہیں، شہباز شریف کے کہنے پر ارکان اسمبلی پر حملہ کیا گیا، پولیس کی مداخلت سے پوری اسمبلی کا استحقاق مجروح ہوا ہے، صوبہ میں کوئی آئینی بحران نہیں سردار عثمان بزدار آج بھی وزیراعلیٰ پنجاب ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب اسمبلی میں پاکستان مسلم لیگ اور پاکستان تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ ہم نے وزیراعلیٰ پنجاب کے الیکشن کے حوالے سے عدالتی فیصلہ تسلیم کیا مگر حالات اس وقت خراب ہوئے جب پولیس بلاجواز ایوان میں ارکان اسمبلی پر حملہ آور ہوئی، ہماری رکن اسمبلی آسیہ امجد پر تشدد کیا گیا وہ آج بھی موت و حیات کی کشمکش میں وینٹی لیٹر پر ہیں۔ چودھری پرویزالٰہی نے مزید کہا کہ آئین کے تحت سپیکر، ڈپٹی سپیکر اور وزیراعلیٰ کا انتخاب، اعتماد کا ووٹ اور عدم اعتماد وغیرہ کا سارا بزنس سپیکر کی کرسی پر بیٹھ کر ہوتا ہے لیکن ڈپٹی سپیکر نے سارا الیکشن وزیٹرز گیلری سے کروایا جو کہ غیر آئینی ہے، مزید یہ کہ ہمارے ارکان اسمبلی نے جہاں ووٹ کاسٹ کرنے تھے وہاں پولیس کھڑی تھی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کی غیر قانونی مداخلت سے پوری اسمبلی کا استحقاق مجروح ہوا ہے، اس سلسلہ میں تحریک استحقاق، کمیٹی کے زیر غور ہے جس پر رولز آف پروسیجر کے تحت عمل کیا جائے گا۔ سپیکر نے کہا کہ عدالت ہمیں بتائے کہ اسمبلی کا بزنس پولیس نے چلانا ہے یا ہم نے؟ آج بھی سپیکر کی اجازت کے بغیر اسمبلی کے گیٹوں اور اسمبلی احاطہ میں پولیس اہلکار سول کپڑوں میں موجود ہیں، ہم ان پولیس اہلکاروں کی تصویریں میڈیا میں دیں گے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ شریفوں کو گلی محلوں میں کوئی نہیں پوچھتا تھا، ہم نے انہیں اسمبلی میں بٹھایا اور عزت دی، ان کے پروڈکشن آرڈر جاری کیے، استحقاق ایکٹ کے تحت ان کے حقوق کا تحفظ کیا تمام انتظامیہ ان کے سامنے لا کر کھڑی کی، تاریخ میں پہلی بار آئی جی پنجاب پولیس کو اسمبلی طلب کیا، جس آئی جی نے ارکان اسمبلی سے معافی مانگی آج وہی اسمبلی کی توہین کر رہا ہے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ شریف پانچ سال کے بعد بھی نہیں بدلے، انتقامی کاروائیاں کرتے ہیں، ان کو چھ مرتبہ اقتدار ملا مگر یہ ویسے کے ویسے ہی ہیں۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ سیکرٹری کوآرڈی نیشن پنجاب اسمبلی عنایت اللہ لک کا کیا قصور ہے کہ انہیں حراست میں لیا، سیکرٹری اسمبلی محمد خان بھٹی کے خلاف 3 ایم پی او کے تحت حراست کے آرڈرز بھی غیر قانونی ہیں۔ سپیکر چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ ہم نے اسمبلی کی توقیر میں اضافہ کیا شریفوں نے پانچ منٹ میں ارکان اسمبلی کو بے توقیر کر دیا، اٹھارویں ترمیم کی دھجیاں اڑا کر رکھ دی ہیں۔ پریس کانفرنس سے رکن اسمبلی محمد بشارت راجہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے ساڑھے تین سال میں ارکان اسمبلی کے وقار میں اضافہ کیا، ہم نے ن لیگ کے ووٹ کو عزت دو کے بیانیہ کو عزت دی۔ انہوں نے کہا کہ ابھی ن لیگ کو مکمل اختیار بھی نہیں ملا اور یہ ارکان اسمبلی کی توہین کر رہے ہیں، ایک غیر آئینی طور پر منتخب وزیراعلیٰ یہ چاہتا ہے کہ صوبے کا اختیار اسے دے دیا جائے، ایسا نہیں ہو سکتا، ہمارے امیدوار کو زخمی کر کے ایوان سے باہر نکال دیا گیا، ہمارے 26 ارکان جو ان کی طرف گئے ہیں اگر آج بھی کو ان میں سے مائنس کر دیں تو ن لیگ کے پاس اکثریت نہیں رہتی۔ راجہ بشارت نے کہا کہ ہم لوٹوں کے خلاف عدالت گئے ہوئے ہیں الیکشن کمیشن نے 6 مئی کی تاریخ دی ہے۔ پی ٹی آئی رکن اسمبلی مراد راس نے کہا کہ یہ نہیں ہو سکتا کہ تمام قوانین اور آئین پی ٹی آئی کیلئے ہوں اور ن لیگ ان سے مستثنیٰ ہو۔ ارکان اسمبلی میاں اسلم اقبال، میاں محمود الرشید، سبطین خان، چودھری ظہیر الدین، حافظ عمار یاسر سمیت خواتین ارکان اسمبلی بھی پریس کانفرنس میں موجود تھیں۔

Check Also

Women parliamentarians call on CM Ch Parvez Elahi

Lahore, October 04: Chief Minister Punjab Chaudhry Parvez Elahi has said the political role of …