Saturday , August 13 2022
Breaking News
Home / Featured / پاکستان مسلم لیگ کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا ہنگامی اجلاس، چودھری شجاعت حسین اور طارق بشیر چیمہ کو ان کے عہدوں سے فارغ کردیا گیا

پاکستان مسلم لیگ کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا ہنگامی اجلاس، چودھری شجاعت حسین اور طارق بشیر چیمہ کو ان کے عہدوں سے فارغ کردیا گیا

پارٹی آئین کے آرٹیکل 118/119 کے تحت مرکزی صدر اور مرکزی سیکرٹری جنرل کی خالی نشستوں پر دس یوم کے اندر انتخابات کروانے کیلئے کمیٹی کا قیام، مرکزی صدر اور سیکرٹری جنرل کے اختیار مرکزی چیئرمین الیکشن کمیشن سینئر ایڈووکیٹ جہانگیر اے جھوجھا کے سپرد، مرکزی الیکشن کمیشن کے دیگر ارکان میں امتیاز رانجھا، خدیجہ فاروقی، اشتیاق گوہر ایڈووکیٹ، چودھری عبدالرزاق کمبوہ ایڈووکیٹ شامل، سپیکر پنجاب اسمبلی کے انتخابات کیلئے تحریک انصاف کے امیدوار سبطین خان کی حمایت کا اعلان ارکان اسمبلی کو ووٹ دینے کی ہدایات بھی جاری کردی گئیں

لاہور(28جولائی2022) پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا ہنگامی اجلاس 40 پارٹی ارکان کی درخواست پر مسلم لیگ ہاؤس لاہور میں سینئر رہنما و رکن سینٹرل ورکنگ کمیٹی سینیٹر کامل علی آغا کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ اجلاس میں سینٹرل ورکنگ کمیٹی کے ممبران کی متفقہ منظوری کے بعد مرکزی صدر پاکستان مسلم لیگ چودھری شجاعت حسین اور مرکزی سیکرٹری جنرل طارق بشیر چیمہ کو فی الفور ان کے عہدوں سے فارغ کردیا گیا اور پاکستان مسلم لیگ کے آئین کے آرٹیکل 118/119 کے تحت مرکزی صدر اور مرکزی سیکرٹری جنرل کی خالی نشستوں پر دس یوم کے اندر انتخابات کروانے کیلئے کمیٹی کا قیام عمل میں لایا گیا۔ پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی الیکشن کمیشن کے چیئرمین سینئر ایڈووکیٹ جہانگیر اے جھوجھا جبکہ دیگر ارکان میں امتیاز رانجھا، خدیجہ عمر فاروقی، اشتیاق گوہر ایڈووکیٹ، چودھری عبدالرزاق کمبوہ ایڈووکیٹ مقرر کر دئیے گئے ہیں۔ دونوں عہدوں پر دس دن تک انتخابات تک مرکزی صدر اور سیکرٹری جنرل کے اختیارات مرکزی چیئرمین الیکشن کمیشن پاکستان مسلم لیگ جہانگیر اے جھوجھا ایڈووکیٹ کے سپرد کر دیئے گئے۔ مرکزی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کی طرف سے سپیکر پنجاب اسمبلی کی خالی نشست پر ہونے والے انتخابات کیلئے تحریک انصاف کے امیدوار سبطین خان کی حمایت کا بھی اعلان کر دیا گیا اور پاکستان مسلم لیگ کے تمام ارکان پنجاب اسمبلی کو انہیں ووٹ دینے کی ہدایات بھی جاری کر دی گئیں۔ اجلاس میں متفقہ طور پر منظور ہونے والی قراردادیں درج ذیل ہیں۔ پہلی قرارداد تنویر اعظم چیمہ ایڈووکیٹ مرکزی ممبر سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ نے پیش کی جس میں کہا گیا کہ سنٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ کا یہ اجلاس صدر پاکستان مسلم لیگ جناب چودھری شجاعت حسین صاحب کی گزشتہ لمبے عرصے سے خرابی صحت کی وجہ سے فیصلوں کی استعداد ختم ہونے پر گہری تشویش کا اظہار کرتا ہے۔ آج کا یہ اجلاس صدر محترم کی طرف سے صوبائی صدر پاکستان مسلم لیگ پنجاب جناب چودھری پرویزالٰہی صاحب کی نامزدگی بطور وزیراعلیٰ پنجاب حمایت اور تائید کرنے کے بعد چودھری طارق بشیر چیمہ سیکرٹری جنرل پاکستان مسلم لیگ اور اپنے بیٹے چودھری سالک حسین کی سازش کا شکار ہوکر ایک خط کے ذریعے اپنی پارٹی کے ممبران صوبائی اسمبلی کو مخالف امیدوار کے حق میں ووٹ ڈالنے کی ہدایت جاری کر دی جس کا اختیار آئین پاکستان کے تحت ان کو حاصل نہ تھا جس کی وجہ سے پارٹی کی بہت بدنامی ہوئی اور پارٹی کو نقصان پہنچا ہے۔ یہ کہ اس فیصلہ سے چودھری شجاعت حسین کی مسلسل بیماری کی وجہ سے ذہنی حالت کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ وہ اس ذہنی کیفیت میں پارٹی کی صدارت کرنے کی صلاحیت کھو چکے ہیں اس لیے پارٹی کو مکمل تباہی سے بچانے کیلئے ضروری ہو گیا ہے کہ انہیں پاکستان مسلم لیگ کی صدارت سے فی الفور الگ کر دیا جائے اور سیکرٹری جنرل چودھری طارق بشیر چیمہ کو بھی پارٹی مفادات کے خلاف مسلسل اقدامات اٹھانے پر سیکرٹری جنرل کے عہدے سے الگ کر دیا جائے۔ یہ کہ آج کے بعد دونوں اصحاب صدر پاکستان مسلم لیگ چودھری شجاعت حسین اور سیکرٹری جنرل پاکستان مسلم لیگ چودھری طارق بشیر چیمہ کو ان کے عہدوں سے فارغ کیا جاتا ہے اور آج کے بعد وہ اپنے اختیارات بطور صدر اور سیکرٹری جنرل استعمال نہ کریں۔ سینٹرل ورکنگ کمیٹی سے گذارش ہے کہ ان کی جگہ فوری الیکشن کروانے کیلئے ایک قرارداد کے ذریعے پارٹی آئین کے آرٹیکل 118/119 کے تحت الیکشن کمیشن کا قیام عمل میں لایا جائے۔ میاں محمد منیر مرکزی ممبر سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ نے اپنی قرارداد میں کہا کہ آج کا سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ کا یہ اجلاس مرکزی صدر پاکستان مسلم لیگ اور سیکرٹری جنرل کی نشستیں خالی ہونے پر بقیہ مدت کیلئے الیکشن کا اعلان کرتا ہے اور اس سلسلہ میں الیکشن کروانے کیلئے زیر آرٹیکل 118/119 آئین پاکستان مسلم لیگ مندرجہ ذیل پانچ سینئر ارکان پاکستان مسلم لیگ پر مشتمل الیکشن کمیشن کا تقرر عمل میں لایا جاتا ہے۔ جہانگیر اے جھوجھا ایڈووکیٹ چیئرمین الیکشن کمیشن پاکستان مسلم لیگ، ارکان میں امتیاز رانجھا، خدیجہ عمر فاروقی، اشتیاق احمد گوہر ایڈووکیٹ، چودھری عبدالرزاق کمبوہ ایڈووکیٹ شامل ہیں۔ ایم پی اے خدیجہ عمر فاروقی مرکزی ممبر سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ نے اپنی قرارداد میں کہا کہ سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ کا آج کا یہ اجلاس فیصلہ کرتا ہے کہ آج سے الیکشن کی تکمیل تک جہانگیر اے جھوجھا سینئر ایڈووکیٹ چیئرمین الیکشن کمیشن پاکستان مسلم لیگ آئین پاکستان مسلم لیگ کے تحت الیکشن کی تکمیل تک صدر اور سیکرٹری جنرل کے تمام تنظیمی اور انتظامی اختیارات استعمال کریں اور وہ تمام انتظامی اور تنظیمی اختیارات استعمال کرتے ہوئے دس دن کے نوٹس پر الیکشن کیلئے جنرل کونسل کا خصوصی اجلاس طلب فرما کر جنرل کونسل سے سنٹرل ورکنگ کمیٹی کے فیصلوں کی منظوری لے کر اسی اجلاس میں الیکشن کا انعقاد یقینی بنائیں۔ وقاص حسن موکل مرکزی ممبر سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ کی پیش کردہ قرارداد کے مطابق سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ کا آج کا یہ اجلاس فیصلہ کرتا ہے کہ پنجاب اسمبلی میں سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی کے بطور وزیراعلیٰ پنجاب منتخب ہونے کے بعد سپیکر کی نشست خالی ہونے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کے نامزد امیدوار محمد سبطین خان کی حمایت کا اعلان کرتا ہے اور تمام ارکان پنجاب اسمبلی پاکستان مسلم لیگ کو ہدایت کرتا ہے کہ وہ سپیکر کیلئے الیکشن میں جناب محمد سبطین خان کے حق میں ووٹ ڈالیں۔ جاوید اقبال گورائیہ مرکزی ممبر سینٹرل ورکنگ کمیٹی پاکستان مسلم لیگ نے قرارداد میں کہا کہ پاکستان مسلم لیگ کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا آج کا یہ اجلاس چودھری پرویزالٰہی صدر پاکستان مسلم لیگ پنجاب اور وزیراعلیٰ پنجاب کو ان کی پارٹی اور ملک کیلئے قابل ذکر خدما ت ادا کرنے پربھرپور خراج تحسین پیش کرتا ہے اور خواہش کا اظہار کرتا ہے کہ آئندہ بھی وہ پہلے سے بڑھ کر فلاحی اور رفاہی منصوبے بنا کر عوامی خدمت کیلئے ریکارڈ قائم کریں گے اور پارٹی کی عوام میں مزید عزت کا باعث بنیں گے۔

Check Also

PML CWC emergency meeting, Ch Shujat Hussain and Tariq Bashir Cheema were relieved from their posts

Under Article 118/119 of the party constitution, a committee has been established to hold elections …