Sunday , February 5 2023
Breaking News
Home / Featured / وزیراعلیٰ چودھری پرویزالٰہی کی زیر صدارت اجلاس، قدیم و تاریخی عمارتوں و مقامات کی ڈرون سے فضائی نگرانی کا فیصلہ

وزیراعلیٰ چودھری پرویزالٰہی کی زیر صدارت اجلاس، قدیم و تاریخی عمارتوں و مقامات کی ڈرون سے فضائی نگرانی کا فیصلہ

لاہور والڈ سٹی اتھارٹی کو ڈرون دینے کیلئے ضروری اقدامات کی ہدایت، سرگنگارام کی دکانیں اور کٹری میں میوزیم اور گنگارام گیلری قائم کی جائیگی
لاہور پاکستان کا ثقافتی دل ہے، لاہور کی تاریخی اور ثقافتی شکل بحال کر کے جدید ترین سیاحتی مرکز بنائیں گے: پرویزالٰہی
لاہور 6دسمبر: وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویزالٰہی کی زیر صدارت وزیراعلیٰ آفس میں والڈ سٹی لاہور اتھارٹی سے متعلق اعلیٰ سطح کااجلاس منعقد ہوا۔ ڈی جی لاہور والڈ سٹی اتھارٹی کامران لاشاری نے تفصیلی بریفنگ دی۔ اجلاس میں قدیم و تاریخی عمارتوں و مقامات کی ڈرون سے فضائی نگرانی کا فیصلہ کیا گیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ گنجان آباد علاقوں میں جدید ترین ڈرون کے ذریعے تاریخی عمارتوں کی مانیٹرنگ کی جائے گی اور تاریخی عمارات کے اردگرد تجاوزات کے سدباب کیلئے ڈرون ٹیکنالوجی استعمال کی جائے گی۔ جدید ترین ڈرون سے قدیم عمارتوں ومقامات کوقبضوں سے محفوظ رکھا جاسکے گا۔ وزیراعلیٰ چودھری پرویزالٰہی نے ہدایت کی کہ لاہور والڈ سٹی اتھارٹی کو ڈرون دینے کیلئے ضروری اقدامات کیے جائیں۔ اجلاس میں معمار لاہور سرگنگارام کی ٹیکسالی گیٹ میں قدیم رہائش گاہ کی بحالی پررپورٹ پیش کی گئی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ شیخوپوراں بازار ٹیکسالی گیٹ میں گنگارام کی دکانیں اور کٹری میں میوزیم اور گنگارام گیلری قائم کی جائے گی۔ سر گنگا رام جدید لاہور کے معمار ہیں، ان کی سماجی خدمات کو فراموش نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ لاہور پاکستان کا ثقافتی دل ہے، تاریخی حیثیت بحال کریں گے۔ لاہور کی تاریخی اور ثقافتی شکل بحال کر کے جدید ترین سیاحتی مرکز بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لاہور کی ثقافتی روایات کی بحالی کاکام سابقہ دور میں جہاں چھوڑا تھا، وہیں سے شروع کیا ہے۔ وزیراعلیٰ کو بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ لاہور کے دہلی دروازے اور شاہی گزرگاہ کی بحالی سے پاکستان کا ثقافتی امیج بہتر ہوا۔ اندرون لاہور میں 700گھر اور 509دوکانوں کو بحال کیاگیا ہے۔ اندرون شہر میں انفراسٹرکچر سروسز، گلیوں کی بحالی، واٹر سپلائی سسٹم اور انڈر گراؤنڈ وائرنگ مکمل ہوچکی ہے۔ بریفنگ میں مزید بتایا گیا کہ ”ویکھ لاہور، روشن گلیاں، یاترا اور صوفی نائٹ“ میں شائقین اور سیاح کیثر تعداد میں شرکت کرتے ہیں۔ رم مارکیٹ کو منتقل کرکے بادشاہی مسجد کے عقبی حصے کی تاریخی حیثیت بحال کی جائے گی۔ شاہی قلعے پر دنیا کی سب سے بڑی پیچر وال بنائی گئی ہے۔ گلی سجان سنگھ کی بحالی سے سٹریٹ ٹورازم فروغ پارہا ہے۔ والڈ سٹی سالڈ مینجمنٹ سسٹم سے صفائی ستھرائی کے معیار کو یقینی بنایا جاتاہے۔ بردیناناتھ کنواں، شاہی باورچی خانہ اور شاہی گزرگاہ کو مکمل طورپر بحال کردیا گیاہے۔ بھاٹی گیٹ تا کرتی حاجی اللہ بخش 1028قدیمی دکانوں کو تاریخی حیثیت میں بحال کیاگیا ہے۔ لاہور میں قدیمی عمارتوں اور آثار قدیمہ کی بحالی کیلئے ورلڈ بینک اور اے ایف ڈی اور دیگر ادارے بھرپو رتعاون کررہے ہیں۔ یوسف صلاح الدین، سابق وفاقی سیکرٹری و چیئرمین پی اینڈ ڈی سلمان غنی، سابق پرنسپل سیکرٹر ی وزیراعلیٰ پنجاب جی ایم سکندر، ڈی جی والڈ سٹی لاہور اتھارٹی کامران لاشاری، پرنسپل سیکرٹری وزیراعلیٰ محمد خان بھٹی، سیکرٹری اوقاف اور ڈی جی پی ایچ اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

Check Also

Under nose of government terrorism is raising its head again, they are only worried about crushing opponents: Imran Khan

PDM and Shehbaz Sharif have nothing for providing relief to people, after incompetency, government also …